24

اسرائیل پر بلائے گئے سلامتی کونسل کےاجلاس کو ویٹو کرنے پر چین امریکا پر برہم

امریکا نے ویٹو پاور استعمال کرتے ہوئے سلامتی کونسل کا اجلاس ملوتی کرادیا تھا، فوٹو: فائل

امریکا نے ویٹو پاور استعمال کرتے ہوئے سلامتی کونسل کا اجلاس ملوتی کرادیا تھا، فوٹو: فائل

بیجنگ: چین نے مشرق وسطی کے تناؤ میں امریکا کے کردار پر تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکا نے فلسطین سے متعلق اجلاس کو ویٹو کر کے سلامتی کونسل کو مفلوج کردیا۔

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق چین کی وزارت خارجہ کی جانب سے جاری بیان میں اسرائیل سے فلسطین کے ساتھ مکمل جنگ بندی کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ اسرائیل اور فلسطین کے معاملے پر امریکا کا کردار مایوس کن ہے۔ امریکا نے اس اہم مسئلے پر بلائے گئے اجلاس کو ویٹو کرکے سلامتی کونسل کو مفلوج کردیا۔

یہ بھی پڑھیں : اسرائیل کی بمباری میں اسلامی یونیورسٹی کی عمارت تباہ، شہادتیں 217 ہوگئیں 

چین کی وزارت خارجہ کے ترجمان ژاؤ لیجیان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر اپنی ٹوئٹ میں صارفین سے سوال کیا کہ جب فلسطینی عوام تکلیف میں مبتلا ہیں تو انسانی حقوق کے علمبردار امریکا اس اقدام پر حق بجانب ہے  یا یہ امریکی مفادات کے لیے اسرائیل کو اپنی خدمات پیش کرنے کا ایک بہانہ ہے؟ اور کیا یہی بات امریکا اصول پر مبنی بین الاقوامی آرڈر کہتا ہے؟

یہ خبر بھی پڑھیں : امریکا نے اسرائیلی جارحیت پر ہونے والا سلامتی کونسل کا اجلاس مؤخر کروا دیا

قبل ازیں پیر کے روز پریس کانفرنس میں چین کی وزارت خارجہ کے ترجمان ژاؤ لیجیان نے اسرائیلی حملوں کو رکوانے کے لیے امریکا سے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرنے اور اس اہم ذمہ داری کو پورا کرنے کا مطالبہ بھی کیا تھا۔

یہ خبر پڑھیں : اسرائیل مسلمانوں کے خلاف تشدد اور دھمکیوں کا سلسلہ بند کرے، چین 

دوسری جانب امریکا کا کہنا ہے کہ ہم نے سلامتی کونسل کے اجلاس کو اتوار تک صرف مؤخر کیا ہے، اجلاس کو منسوخ نہیں کیا۔ ہم چاہتے ہیں کہ اسرائیل اور فلسطین کے اس اہم ایشو پر امن کے لیے گفتگو کے لیے مزید وقت ملے۔ اتوار کے اجلاس میں اہم فیصلے کیئے جائیں گے۔

یہ بھی پڑھیں : ’حملے جاری رہیں گے‘ ؛ نیتن یاہو نے جنگ بندی کے مطالبے کو مسترد کردیا 

واضح رہے کہ اسرائیل کے غزہ پر بمباری کا آج نواں روز ہے اور آج بھی 6 فلسطینی شہید ہوئے جن میں ایک صحافی بھی شامل ہیں جب کہ اب تک شہید ہونے والوں کی مجموعی تعداد 219 ہوگئی ہے جن میں 63 خواتین 36 بچے اور 16 بزرگ شامل ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں