64

ایف آئی اے کا مزید 13 شوگر ملز کے خلاف کاروائی کا آغاز

اب تک 15 شوگر بروکرز سٹہ گروپس کے حوالے سے اپنے بیانات ریکارڈ کروا چکے ہیں، ایف آئی اے۔ فوٹو:فائل

اب تک 15 شوگر بروکرز سٹہ گروپس کے حوالے سے اپنے بیانات ریکارڈ کروا چکے ہیں، ایف آئی اے۔ فوٹو:فائل

 اسلام آباد: ایف آئی اے نے مزید تیرہ شوگر ملز کے خلاف کاروائی کا آغاز کر دیا۔

ایکسپریس نیوزکے مطابق ملک بھر میں شوگر مل مافیا اور سٹہ بازوں کے خلاف کریک ڈاؤن جاری ہے، اور اب تک متعدد شوگر ملز مالکان کو گرفتار یا ان کے خلاف تحقیقات کا آغاز کیا جاچکا ہے، اب ایف آئی اے نے مزید 13 شوگر ملز کے خلاف کاروائی کا آغاز کر دیا ہے۔

اس خبرکوبھی پڑھیں: ایف آئی اے کے 8 شوگر ملز کو طلبی کے نوٹسز

جن شوگر ملز کے خلاف کارروائی شروع کی گئی ہے، ان میں ہنزہ شوگر، اشرف شوگر، حسین شوگر ، سیون اسٹار شوگر، شیخو شوگر، اتحاد شوگر، فاطمہ شوگر، کشمیر شوگر، میر پور شوگر، النور شوگر، سورج شوگر، ایس جی ایم شوگر اور سندھ باد شوگرملز شامل ہیں۔

اس خبرکوبھی پڑھیں: نیب نے مریم نواز کو دوبارہ طلب کر لیا

ایف آئی اے حکام کا کہنا ہے کہ اب تک 15 شوگر بروکرز سٹہ گروپس کے حوالے سے اپنے بیانات ریکارڈ کروا چکے ہیں، جب کہ ایف آئی اے نے 8 شوگر ملز مالکان کو نوٹسز بھجوائے لیکن تاحال کوئی ایف آئی اے پیش نہ ہوا۔

اس خبرکوبھی پڑھیں: شریف خاندان و رہنما تحریک انصاف کی شوگر ملز بلیک لسٹ قرار

ایف آئی اے کے مطابق مریم نواز کی چوہدری شوگر مل کو 31 مارچ کو، حمزہ شہباز کی رمضان شوگر مل کو 2 اپریل، جہانگیر ترین کی جے ڈی ڈبلیو گروپ کو پہلے 2 اپریل کو طلب کیا گیا تھا، اور پیش نہ ہونے پر انہیں اب دوبارہ جمعہ کو ایف آئی اے میں طلبی کا نوٹس بھجوایا گیا ہے،  المعیز شوگر مل کو 5 اپریل کو طلب کیا گیا تھا، میاں طیب کی حمزہ شوگر مل کو 8 اپریل کو طلب کیا گیا ہے، ہمایوں اختر کی تاندلیانوالہ شوگر مل کو 12 اپریل کو طلب کیا گیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں