16

بھارت میں الیکشن ڈیوٹی کرنے والے 700 ٹیچرز کورونا سے ہلاک

اترپردیش میں 28 روز بلدیاتی الیکشن میں 15 ہزار ٹیچرز نے کرائے، فوٹو: فائل

اترپردیش میں 28 روز بلدیاتی الیکشن میں 15 ہزار ٹیچرز نے کرائے، فوٹو: فائل

نئی دہلی: بھارتی ریاست اتر پردیش میں بلدیاتی انتخابات کے دوران ڈیوٹی سر انجام دینے والے 700 سے زائد اساتذہ کورونا میں مبتلا ہو کر زندگی کی بازی ہار گئے۔

عرب نیوز سے بات کرتے ہوئے اساتذہ یونین کے ترجمان ڈاکٹر آر پی مشرا نے بتایا کہ اتر پردیش میں ہونے والے حالیہ بلدیاتی انتخابات میں ڈیوٹی انجام دینے والے 700 سے زیادہ اساتذہ کی کورونا سے موت ہوچکی ہے اگر ووٹوں کی گنتی کو موخر نہیں کیا گیا تو مزید تباہی کا خدشہ ہے۔

بھارت میں کورونا کی ہولناکی کے باجود ریاست اتر پردیش میں بلدیاتی الیکشن کا انعقاد کیا گیا جو اپریل کے پہلے ہفتے سے شروع ہو کر گزشتہ روز ختم ہوا اور اب گنتی کا عمل جاری ہے۔ بلدیاتی انتخابات میں 15 ہزار سے زائد اسکول ٹیچرز نے انتخابی عملے کے طور پر ذمہ داریاں نبھائی تھیں۔

یہ خبر پڑھیں :  بھارت میں کورونا کی نئی ہلاکت خیز لہر کے ذمہ دار مودی ہیں، واشنگٹن پوسٹ 

بلدیاتی الیکشن کے بعد سے انتخابی عمل میں حصہ لینے والے اساتذہ تیزی سے کورونا کا شکار ہورہے ہیں۔ 700 سے زائد اساتذہ کی کورونا سے موت کے بعد ٹیچرز ایسوسی ایشن نے ووٹوں کی گنتی کے عمل کو ملتوی کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

امریکی اخبار واشنگٹن پوسٹ میں شائع ہونے والی رپورٹ میں بھارت میں کورونا کے تیزی سے پھیلاؤ کی وجہ کمبھ میلے اور انتخابات کو قرار دیا گیا ہے جس کا ذمہ دار وزیراعظم مودی کو ٹھہرایا گیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں