22

جاپان میں پہلی بار امریکا اور فرانس کیساتھ مشترکہ فوجی مشقیں جاری

ایک ہفتے جاری رہنے والی مشق کا آغاز منگل سے ہوا، فوٹو: رائٹرز

ایک ہفتے جاری رہنے والی مشق کا آغاز منگل سے ہوا، فوٹو: رائٹرز

ٹوکیو: جاپانی سرزمین میں پہلی بار میزبان ملک کے ساتھ امریکا اور فرانس کی مشترکہ فوجی مشقوں کا آغاز ہوگیا۔

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق جنوبی جاپان کے ہری گھاس سے بھری گھاٹی والے میدان میں واقع تربیتی علاقے میں CH-47 ٹرانسپورٹ ہیلی کاپٹرز سے بارش کے قطروں کی مانند درجنوں جاپانی، امریکی اور  فرانسیسی فوجی مشترکہ فوجی کی مشق کے لیے اتر رہے ہیں۔

اس میدان میں ہونے والی یہ مشق ایک دور دراز جزیرے کو دشمن کے حملے سے بچانے کے لیے کی جارہی ہے۔ تینوں ممالک کی جاپانی سرزمین پر پہلی مشترکہ مشقیں “اے آر سی 21″ کے نام سے موسوم کی گئی ہیں۔

Japan america france millitary drill 1

تینوں ممالک نے خطے میں چین کی بڑھتی ہوئی مداخلت اور متنازع علاقوں کی ملکیت کے دعوؤں کے خلاف فوجی تعلقات کو بڑھانے کی خواہش کا اظہار کیا تھا جس کے بعد یہ مشترکہ فوجی مشقیں رکھی گئی ہیں۔

گزشتہ روز ہونے والی مشق میں 200 سے زائد فوجی اہلکاروں نے حصہ لیا جس میں فرانسیسی فوج اور امریکی میرین کور اور جاپانی فوجیوں نے بھی جنوبی میازاکی کے علاقے میں جاپانی سیلف ڈیفنس فورس کے کریشیما ٹریننگ ایریا میں کنکریٹ کی عمارت کا استعمال کرتے ہوئے شہری جنگی ڈرل چلائے۔

Japan america france millitary drill 3

ہفتہ کے روز ہی امریکا، جاپان اور فرانس نے مشرقی چین میں 11 جنگی جہازوں پر مشتمل ایک توسیع شدہ بحری مشق میں آسٹریلیا کے ساتھ شمولیت اختیار کی۔ تائیوان کے اس جزیرے پر چین نے ملکیت کا دعویٰ کرکے دباؤ بڑھانا شروع کردیا ہے۔

Japan america france millitary drill 2

واضح رہے کہ جاپان میں ہونے والی یہ مشترکہ فوجی مشق اُس وقت کی گئیں جب چین نے علاقائی سمندروں میں اپنی فوجی صلاحیتوں اور استعداد میں اضافہ کیا جب کہ جاپان سینکاکو جزیروں کے آس پاس جاپانی دعوے دار پانیوں اور اس کے آس پاس چینی سرگرمیوں کے بارے میں تشویش کا اظہار کیا تھا۔

 

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں