14

سندھ میں رات 8 بجتے ہی نئی پابندیوں پر عمل درآمد کا آغاز

سندھ بھرمیں رات 8 بجے کے بعد گاڑیوں کی نقل وحرکت پر بھی پابندی ہے - فوٹو: فائل

سندھ بھرمیں رات 8 بجے کے بعد گاڑیوں کی نقل وحرکت پر بھی پابندی ہے – فوٹو: فائل

 کراچی: سندھ میں رات 8 بجے سے لاک ڈاؤن کی نئی پابندیوں پر عمل درآمد کا آغاز ہوگیا جب کہ پولیس نے غیر ضروری طور پر گھروں سے نکلنے والے افراد کو خبردار کرکے واپس روانہ کردیا۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق محکمہ داخلہ سندھ نے کورونا وائرس کی نئی لہر کے سبب عائد مزید پابندیوں کا نوٹی فکیشن جاری کردیا جس کے مطابق آج رات سے ایس او پیز پر عمل درآمد شروع کردیا گیا ہے۔

شام 6 بجے کراچی کے تمام کاروباری مراکز بند ہونے کے بعد شہریوں کو گھروں کی طرف جانے کے لیے دو گھنٹے کا وقت فراہم کیا گیا اور پولیس نے غیرضروری طور پر باہر نکلنے والے افراد کو وارننگ دے کر ان کے علاقوں کی طرف واپس کردیا۔

محکمہ داخلہ کے نوٹی فکیشن میں کہا گیا ہے کہ ضروری کاموں کے لیے گاڑیوں کو صرف ایک فرد کے ساتھ باہر جانے کی اجازت ہوگی، سندھ بھرمیں رات 8 بجے کے بعد گاڑیوں کی نقل وحرکت پر پابندی ہوگی۔

نوٹی فکیشن کے مطابق 10 سے زائد افراد کی تقریبات پر پابندی عائد کی گئی ہے، گھر شادی ہال یا کسی بھی مقام پر 10 سے زائد افراد کی تقریب یا اجتماع نہیں ہوسکے گا۔ ہوٹلوں، ریسٹورینٹس میں انڈور اور آوٹ ڈور سروس پر پابندی برقرار رہے گی۔ ریسٹورنٹس کو ہوم ڈیلیوری، ٹیک اوے اور ڈرائیو تھرو کی رات 12 بجے تک اجازت ہوگی۔

دوسری جانب وزیراعلی سندھ سید مراد علی شاہ نے صوبائی وزرا کو ہدایت کی ہے کہ وہ اچانک دورے کرکے صورتحال کا جائزہ لیں۔ وزیراعلی سندھ کا کہنا ہے کہ وہ بھی اچانک دورے کرکے صورتحال کا جائزہ لیں گے۔

واضح رہے کہ سندھ حکومت نے کورونا کا پھیلاؤ روکنے کے لیے صوبے بھر میں نافذ پابندیوں کو مزید سخت کردیا ہے جس کے تحت صوبے بھر میں کاروبار کے اوقات صبح 5 بجے سے شام 6 بجے تک ہوں گے جبکہ جمعہ اور اتوار کے دن کاروبار مکمل بند رہے گا۔ حکومت سندھ کا کہنا ہے کہ اگر کسی کو ضروری کام یا اسپتال جانا ہے تو اسے تصدیق کے بعد جانے کی اجازت دی جائے گی۔

 

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں