42

لاشوں کےڈھیر لگ جائیں لاک ڈاؤن نہیں لگے گا، بورس جانسن کی اپنے بیان کی تردید

برطانیہ میں کورونا کی وجہ سے اب تک ایک لاکھ 27 ہزار سے زائد اموات ریکارڈ ہوچکی ہیں

برطانیہ میں کورونا کی وجہ سے اب تک ایک لاکھ 27 ہزار سے زائد اموات ریکارڈ ہوچکی ہیں

 لندن: برطانوی وزیراعظم ایک اخبار میں چپھنے والے اپنے بیان کی تردید کی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ بورس جانسن نے ایک اجلاس میں کہا تھا کہ لاشوں کے ڈھیر لگ جائیں لیکن اب لاک ڈاؤن نہیں لگے گا۔

برطانوی وزیراعظم بورس جانسن نے اپنے متنازع بیان کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ اخبار کی جانب سے لگائے گئے الزامات من گھڑت اور مضحکہ خیز ہیں، برطانیہ نے کووڈ کی وجہ سے گزشتہ سال پابندیوں اور لاک ڈاؤن میں ہی گزارا تھا تاہم ملک میں ویکسینیشن شروع ہونے کے بعد ان پابندیوں میں بالترتیب نرمی کی گئی ہے۔

ڈیلی میل کے مطابق گزشتہ سال اکتوبر جب کورونا کی صورتحال بے قابو تھی اور برطانیہ میں دوسری بار لاک ڈاؤن نافذ کیا گیا تھا تو وزیراعظم بورس جانسن نے اجلاس میں کہا تھا کہ ملک میں اب کوئی لاک ڈاؤن نہیں لگے گا چاہے لاشوں کے ڈھیر لگ جائیں۔ برطانوی اخبار کی خبر سامنے آنے کے بعد بورس جانسن کو شدید تنقید کا سامنا ہے اور اپوزیشن سمیت عوامی حلقوں نے وزیراعظم سے بیان پر وضاحت دینے کا مطالبہ کیا ہے۔

واضح رہے کہ برطانیہ میں کورونا وائرس کی صورتحال کافی خراب ہے، وبا کی وجہ سے اب تک ایک لاکھ 27 ہزار سے زائد اموات ریکارڈ ہوچکی ہیں جب کہ کورونا کے بڑھتے کیسز اور نئی اقسام سامنے آنے کے بعد اسپتالوں میں مشکل صورتحال کا سامنا ہے جب کہ کئی شہروں میں لاک ڈاؤن اور سخت پابندیاں بھی عائد کی گئی ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں