16

میوزک پروڈیوسر نے زیادتی کا نشانہ بنایا جس پر حاملہ بھی ہوئی، لیڈی گاگا

میں اس شخص کا نام لینا چاہتی ہوں اور نہ سامنا کرنا چاہتی ہوں، فوٹو: فائل

میں اس شخص کا نام لینا چاہتی ہوں اور نہ سامنا کرنا چاہتی ہوں، فوٹو: فائل

 واشنگٹن: عالمی شہرت یافتہ امریکی گلوکارہ نے انکشاف کیا ہے کہ انہیں 19 سال کی عمر میں ایک میوزک پروڈیوسر نے جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا تھا جس کے نتیجے میں وہ حاملہ بھی ہوگئی تھیں۔

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق 35 سالہ معروف گلوکارہ لیڈی گاگا ایک انٹرویو میں اپنی زندگی سے متعلق ایک اہم انکشاف کرتے ہوئے رو پڑیں، انہوں نے بتایا کہ کیریئر کے آغاز میں جب وہ صرف 19 سال کی تھیں ایک میوزک پروڈیوسر نے زبردستی جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا تھا۔

اسٹیفنی جرمونوٹا جو موسیقی کی دنیا میں لیڈی گاگا کے نام سے شہرت رکھتی ہیں نے اپنی زندگی کی اس تلخ یاد کو کرتے ہوئے بتایا کہ میوزک پروڈیوسر نے مجھے بے لباس ہونے کو کہا اور دھمکی دی تھی کہ اگر میں نے ایسا نہیں کیا تو وہ میرے تمام گانے جلا دے گا۔

امریکی صدر کی حلف برداری کی تقریب میں اپنی گلوکاری کے جوہر دکھانے والی لیڈی گاگا نے مزید کہا کہ حاملہ ہونے پر الٹیاں ہونے اور کمزوری کی شکایات ہوئیں۔ حمل تو ضائع ہوگیا لیکن میں ذہنی طور پر اب تک اس تکلیف سے باہر نہیں نکل پائی ہوں۔

 

لیڈی گاگا نے جنسی حملہ آور میوزک پروڈیوسر کا نام بتانے سے انکار کرتے ہوئے کہ اب وہ کبھی بھی حملہ آور کا نام نہیں لیں گی۔ میں می ٹو ہیش ٹیگ کی اہمیت سے واقف ہوں لیکن میں ایسا نہیں کرسکتی۔ میں کبھی بھی اس شخص کا سامنا نہیں کرنا چاہتی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں