32

نیک شگونی کےلیے انجن میں پھینکے گئے سکّوں نے پرواز منسوخ کروادی

انجن میں پھینکے گئے سکّے جنہیں سرخ کاغذ میں لپیٹا گیا تھا۔ (فوٹو: چائنیز سوشل میڈیا)

انجن میں پھینکے گئے سکّے جنہیں سرخ کاغذ میں لپیٹا گیا تھا۔ (فوٹو: چائنیز سوشل میڈیا)

تیانجن: گزشتہ دنوں چینی شہر ویفانگ سے ہائیکو جانے والی پرواز اس لیے منسوخ کرنا پڑی کیونکہ ایک مسافر نے پرواز کی ’خیر و عافیت‘ کےلیے، نیک شگون کے طور پر جہاز کے انجن میں چھ سکّے پھینک دیئے تھے۔

یہ مسافر بردار طیارہ بھی زیادہ بڑا نہیں تھا اور اس میں عملے سمیت صرف 160 افراد کی گنجائش تھی۔

خوش قسمتی سے ایئرپورٹ کے عملے نے پرواز سے ذرا قبل جہاز کے انجنوں کا اختتامی معائنہ کرتے دوران وہ سکّے دیکھ لیے جو سرخ کاغذ میں لپٹے ہوئے تھے؛ اور فوری طور پر حکام کو خبردار کردیا۔

تب تک تمام مسافر اور جہاز کا تمام عملہ اس میں سوار ہوچکے تھے لیکن ایئرپورٹ حکام نے پائلٹ سے فوری طور پر کہا کہ وہ جہاز کے انجن اسٹارٹ نہ کرے اور تمام مسافروں کو فوراً واپس اتار دیا جائے۔

ہنگامی صورتِ حال کی بناء پر یہ پرواز منسوخ کردی گئی اور نتیجتاً اس کے تمام مسافروں کو اگلی صبح ایک اور پرواز سے روانہ کیا گیا۔

دریں اثناء چین میں شہری ہوابازی کے حکام نے جہاز کے انجن میں سکّے پھینکنے والے شخص کو بھی شناخت کرکے حراست میں لے لیا، جس نے بتایا کہ اس نے انجن میں یہ سکّے ’’نیک شگون‘‘ کے طور پر پھینکے تھے تاکہ یہ طیارہ اور اس میں سوار تمام مسافر بخیر و عافیت اپنی منزل پر پہنچ چکیں۔

چائنیز سوشل میڈیا کے مطابق، اگر انجن میں سکّوں کے گرنے کا معلوم نہ ہوتا اور یہ پرواز روانہ ہوجاتی تو اس سے انجن کو شدید نقصان پہنچ سکتا تھا جبکہ اس پرواز میں موجود تمام افراد کی زندگیاں بھی خطرے میں پڑ سکتی تھیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں