39

کوئٹہ میں فرنٹیئر کانسٹیبلری پر حملہ، تین اہل کار شہید، 5 زخمی

دہشت گروں نے مارگٹ کے علاقے میں سیکورٹی ڈیوٹی پر معمور ایف سی کے دستے پر حملہ کردیا۔(فوٹو:فائل)

دہشت گروں نے مارگٹ کے علاقے میں سیکورٹی ڈیوٹی پر معمور ایف سی کے دستے پر حملہ کردیا۔(فوٹو:فائل)

کوئٹہ میں دہشت گردوں نے فرنٹیئر کانسٹیبلری کی چوکی پر حملہ کردیا، جس کے نتیجے میں تین سپاہی شہید ہوگئے ہیں۔
آئی ایس پی آر کے مطابق کوئٹہ اور تربت میں دہشت گردی کے دو مختلف واقعات میں ایف سی کے تین اہل کار شہید اور 5 زخمی ہوگئے ہیں۔ دہشت گروں نے مارگٹ کے علاقے میں سیکورٹی ڈیوٹی پر معمور ایف سی کے دستے پر حملہ کردیا۔

فائرنگ کے تبادلے میں تین اہل کارلانس نائیک سید حسین شاہ، سپاہی فیصل محمود اورسپاہی نومان الرحمان شہید اور ایک سپاہی زخمی ہوگیا۔ واقعے کے بعد فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے کر مزید کارروائی شروع کردی ہے۔

دہشت گردی کا دوسرا واقعہ تربت کے علاقے شیر بندی میں پیش آیا، جس میں دہشت گردوں نے پاک ایران سرحد پر گشت کرنے والے فرنٹیئر کانسٹیبلری کے جوانوں پر حملہ کیا، جس کے نتیجے میں ایف سی کے چار اہل کار زخمی ہوگئے۔

وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید احمد نے کوئٹہ اور تربت میں ایف سی اہلکاروں پر حملے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ وطن کی حفاظت پر مامور اہل کاروں پر فائرنگ بدترین دہشت گردی ہے۔

انہوں نے دہشت گردوں کی فائرنگ سے ایف سی اہل کاروں کی شہادت پر دکھ کا اظہار کیا اور کہا کہ دہشت گردوں کی بزدلانہ کارروائیوں سے قانون نافذ کرنے والے اداروں کے حوصلے پست نہیں کیے جاسکتے، بلوچستان کی ترقی اور ملکی سلامتی کا مشن جاری رہے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں